Home » دار الافتاء » فون پر نکاح کا حکم

فون پر نکاح کا حکم

سوال: کیا فون پہ نکاح جائز ہے اگر جائز ہے تو طریقہ کیا ہے؟

 الجواب حامداومصلیاً

شرعا نکاح صحیح ہونے کے لیے ضروری ہے کہ ایجاب وقبول گواہوں کی موجودگی  میں ایک ہی مجلس میں ہو، اور چونکہ فون یا انٹرنیٹ  کے ذریعہ ایجاب وقبول کی صورت میں مجلس ایک نہیں ہوسکتی اس لیے  فون پر نکاح درست  نہیں ۔  البتہ یہ صورت  اختیار  کی جاسکتی ہے  کہ آپ فون کے ذریعہ  عورت کے علاقہ   میں کسی باعتماد  شخص کو اپنے نکاح  کا وکیل بنادیں ، یعنی اس کو یہ کہہ دیں  کہ ” میں  آپ کو فلاں لڑکی کے ساتھ اپنے نکاح  کا وکیل بناتا ہوں”۔ پھر وہ وکیل آپ  کانکاح  گواہوں کے سامنے فلاں لڑکی کے ساتھ  کردے  اور لڑکی خود یا اس کا  وکیل اسی مجلس میں قبول کرلے  تو اس  طرح  یہ نکاح درست ہوجائے گا۔ ( تبویب 889۔5) ( فتاویٰ عثمانی ج : 2ص :304 ) واللہ ا علم وعلمہ اتم

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

WpCoderX