سورۃ الرعد اعدادوشمار زمانہ نزول ومرکزی موضوع

اعدادوشمار: سورہ رعد مصحف کی ترتیب کے لحاظ سے تیرھویں سورت ہے۔یہ سورت 6 رکوع 43 آیات 854 کلمات اور3450 حروف پرمشتمل ہے ۔ زمانہ نزول: اس کے زمانہ نزول میں زبردست اختلاف ہے ۔بعض مفسرین اس کو مکی مانتے ہیں کیونکہ اس کے مضامین مکی سورتوں کی طرح ہیں،جبکہ بعض مفسرین نے اس کے مزید پڑھیں

سورہ ہود میں ذکر کردہ دعائیں

دعائیں فَاطِرَ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ أَنْتَ وَلِيِّي فِي الدُّنْيَا وَالْآخِرَةِ تَوَفَّنِي مُسْلِمًا وَأَلْحِقْنِي بِالصَّالِحِينَ [يوسف: 101] آسمانوں اور زمین کے پیدا کرنے والے ! تو ہی دنیا اور آخرت میں میرا رکھوالا ہے۔ مجھے اس حالت میں دنیا سے اٹھانا کہ میں تیرا فرمانبردار ہوں، اور مجھے نیک لوگوں میں شامل کرنا۔ ( ازگلدستہ قرآن)

سورہ ہود میں اخلاقیات کا ذکر

اخلاقیات 1۔کسی اولاد سےقلبی محبت اس کی خوبیوں اور اعلی صفات کی وجہ سے دوسری اولاد سے زیادہ ہونا فطری امور میں سے ہے اس لیے جائز ہے۔{ لَيُوسُفُ وَأَخُوهُ أَحَبُّ إِلَى أَبِينَا مِنَّا وَنَحْنُ عُصْبَةٌ إِنَّ أَبَانَا لَفِي ضَلَالٍ مُبِينٍ} [يوسف: 8] 2۔باصلاحیت شخص کے دشمن اور حاسدین زیادہ ہوتے ہیں،جیسے یوسف علیہ السلام مزید پڑھیں

سورہ ہود میں سیاست وعدالت کا ذکر

سیاست وحکومت 1۔اقتدار کی خواہش اس وقت جائز ہے جب نااہل حکومت پر مسلط ہوں اور خواہش مند کے اندرامانت دار ہونے کے ساتھ ساتھ باصلاحیت ہو، مسائل کو حل کرنے کی سمجھ بوجھ اس کے اندر ہو۔{قَالَ اجْعَلْنِي عَلَى خَزَائِنِ الْأَرْضِ إِنِّي حَفِيظٌ عَلِيمٌ} [يوسف: 55] 2۔حکومتی امور میں مشاورت کے لیے کسی بھی مزید پڑھیں

سورہ ہود میں تجارت وملازمت کا ذکر

تجارت وملازمت 1۔گم شدہ چیز کو ڈھونڈ کرلانے والے کے لیے انعام مقرر کرنا جائز ہے۔{وَلِمَنْ جَاءَ بِهِ حِمْلُ بَعِيرٍ وَأَنَا بِهِ زَعِيمٌ} [يوسف: 72] اسے آج کل کی اصطلاح میں جعالہ کہاجاتاہے۔ 2۔ضمانتی بننا درست ہے۔(ایضا) 3۔خریدوفروخت کی ایسی شرائط مقرر کرنا جائز ہےجو عقد کے مزاج کے خلاف نہ ہو،جیسے حضرت یوسف علیہ مزید پڑھیں

سورہ ہود میں نماز ورموز دعوت کا ذکر

نماز:قرآن عربی کلام ہے اس لیے عربی کے علاوہ کسی اور زبان میں تلاوت کرنے سے تلاوت ادا نہ ہوگی۔{إِنَّا أَنْزَلْنَاهُ قُرْآنًاعَرَبِيًّا} [يوسف: 2] رموزِدعوت 1۔داعی جس چیز کی دعوت دے رہا ہے اسے مکمل سمجھ کراور مسائل کاعلم حاصل کرکے دعوت دینی چاہیے۔{قُلْ هَذِهِ سَبِيلِي أَدْعُو إِلَى اللَّهِ عَلَى بَصِيرَةٍ} [يوسف: 108] 2۔داعی کوشرکیہ مزید پڑھیں

سورہ ہود میں علم تعبیر کا ذکر

علم تعبیر 1۔سورج کی تعبیر باپ سے ، چاند کی تعبیر ماں سے اور ستاروں کی تعبیر بھائیوں سے دی جاسکتی ہے۔{إِنِّي رَأَيْتُ أَحَدَ عَشَرَ كَوْكَبًا وَالشَّمْسَ وَالْقَمَرَ رَأَيْتُهُمْ لِي سَاجِدِينَ } [يوسف: 4] 2۔کسی کے سامنے سجدہ کرنے کی تعبیر اس کی سرداری کوتسلیم کرلینے سے دی جاسکتی ہے۔(ایضا) 3۔اپنے عہدے سے معزول شخص مزید پڑھیں

سورہ ہود میں عقائد کاذکر

1۔توحید اصل عقیدہ ہے لیکن اس کے باوجود دنیا کی اکثریت توحید پر قائم نہیں۔(وَمَا يُؤْمِنُ أَكْثَرُهُمْ بِاللَّهِ إِلَّا وَهُمْ مُشْرِكُونَ) [يوسف: 106] 2۔انبیائے کرام انسانوں ہی میں سے آتے ہیں۔(وَمَا أَرْسَلْنَا مِنْ قَبْلِكَ إِلَّا رِجَالًا نُوحِي إِلَيْهِمْ مِنْ أَهْلِ الْقُرَى) [يوسف: 109] 3۔انبیائے کرام عالم الغیب نہیں ہوتے بلکہ جب اللہ کی مشیت ہوتی مزید پڑھیں

اصول شریعت ( سورہ ہود )

اصول شریعت 1۔یختاراھون الشرین، یعنی دومصیبتیں جمع ہوجائیں تو اہون کو اختیار کرنا چاہیے۔{رَبِّ السِّجْنُ أَحَبُّ إِلَيَّ مِمَّا يَدْعُونَنِي إِلَيْهِ وَإِلَّا تَصْرِفْ عَنِّي كَيْدَهُنَّ أَصْبُ إِلَيْهِنَّ وَأَكُنْ مِنَ الْجَاهِلِينَ} [يوسف: 33] 2۔مشکل کا حل بتانا بھی علما کی ذمہ داری ہے، جیسے یوسف علیہ السلام نے قحط کا حل بھی بتایا۔{ قَالَ تَزْرَعُونَ سَبْعَ سِنِينَ مزید پڑھیں

سورہ ہود کا خلاصہ

خلاصہ مضامین اس سورت کاخلاصہ دوباتیں ہیں: 1۔ ایک تو یہ صحابہ کرام نے فرمائش کی تھی کہ کوئی مفصل واقعہ بیان کیاجائےدوسری طرف تسلی کاسامان کرنابھی مقصود تھا، اس لیے یہ سورت نازل ہوئی ۔ بعض روایات کے مطابق یہ سورت مشرکین مکہ کے سوال کاجواب ہے ۔{لَقَدْ كَانَ فِي يُوسُفَ وَإِخْوَتِهِ آيَاتٌ لِلسَّائِلِينَ} مزید پڑھیں